Saturday, June 27, 2015

خود اپنے والدین کی ہدایت سے اپنی قیمتی چیزوں کو محفوظ کیا ہے، فرزند خان سلیمان

SOURCE: Facebook


کوئٹہ(سنگر نیوز)پرنس محمد کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں گذشتہ چند دنوں میں اخبارات اور مختلف حلقوں میں ان کے حوالے سے گردش کرنے والی افواہوں کی وضاحت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ شاہی محل قلات میں کوئی چوری یا ڈاکہ زنی کی واردات نہیں ہوئی ہے بلکہ انہوں نے خود اپنے والدین کی ہدایت اور رضامندی سے اپنی قیمتی چیزوں کو محفوظ کیا ہے مزید یہ کہ ان کے بارے میں چند دنوں سے ایک غلط تاثر دیا جارہا ہے کہ خان آف قلات کی غیر موجودگی میں انہیں خان بنایا جارہا ہے انہوں نے اس قسم کی خبروں کی سختی سے تردید کرتے ہوئے ہے کہا ہے کہ ایسا ہرگز نہیں ہے وہ اپنے والد کے فرمانبردار بیٹے ہیں۔ انہیں والد کی خیریت اور زندگی بیحد عزیز ہے اور ان کی دعا ہے کہ وہ جلد پاکستان واپس آئیں ان کی غیر موجودگی کے سبب صوبے میں امن کو جو نقصان پہنچ رہا ہے وہ واپس آکراپنا مرتبہ اور منصب سنبھالیں اور یہاں امن کی بحالی کیلئے اپنا موثر کردار ادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ ان کے والد کی واپسی صرف ان کیلئے ہی نہیں بلکہ صوبہ کے امن پسند عوام کیلئے بھی خوش آئند ہوگی اس طرح انشاء اﷲ صوبے میں نہ صرف بدامنی پھیلانے والے عناصر کی سرکوبی میں مدد ملے گی بلکہ مستقبل میں نوجوان نسل صوبے کو ترقی اور امن کے راستے پر چلتا دیکھ پائے گی ۔ پرنس محمد نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ ان کے متعلق کسی قسم کی غلط فہمی کا شکار نہ ہوں۔

http://dailysangar.com/خود-اپنے-والدین-کی-ہدایت-سے-اپنی-قیمتی-چ/

کسی بھی ڈاکوچوراور لٹیرے میں یہ گنجاش نہیں کہ شاہی دربار میں قدم رکھے

 انچارج شاہی محل قلات میر محمد یوسف شاہوانی



قلات: انچارج شاہی محل قلات میر محمد یوسف شاہوانی نے اس خبر کی تروید کی ہے جو گزشتہ روزمقامی اخبار میں آیا تھا کہ شاہی دربار قلات میں نامعلوم افراد آ کر لوٹ مار کرکے اور قیمتی سامان لے کر واپس چلے گئے۔ اس خبر میں کوئی صداقت نہیں۔کسی بھی ڈاکوچوراور لٹیرے میں یہ گنجاش نہیں کہ اس نیت سے شاہی دربار میں قدم رکھے ۔پرنس محمد احمدز ئی جو کہ فرزند خان سلیمان احمدزئی وہ آکر مجھ سے کہا کہ گھر سے کچھ سامان نکالناہے اور پرنس محمد احمدزئی اپنے گھر کا مالک ہے اسے اپنے گھر سے کون روک سکتا ہے پرنس محمد احمدزئی نے ہم سے کہا کہ مجھے اطلاع ملا ہے شاہی محل کے حفاظتی پیش نظرتمام قیمتی اشیا ء اپنے پاس محفوظ رکھوں گا اورشاہی محل کا سیکورٹی کا بندوبست بھی کرونگا ۔اور وہ محل میں نہ تو کسی قسم کا تھوڑپھوڑ کی اور نہ ہی وہ اپنے ہی گھر میں ایسا کرنا چاہتا ہے۔لیکن مقامی اخبار میں لوٹ مار کا بیان قابل مذمت اور نا قابل معافی جرم ہیں جس کو بلوچ قوم ہرگز معاف نہیں کرسکتی کہ وہ من گھڑت خبر شائع کرکے شاہی محل کی بے حرمتی کریں۔
SOURCE: Facebook

میری غیر موجودگی میں آپ ہمارے جانشین ہیں،خان قلات کی نواب ثناء اللہ زہری سے ڈیڑھ گھنٹے ٹیلی فونک رابطہ
خان آف قلات نے کہاکہ میرے غیرموجودگی میں آپ ہی ہمارے جانشین ہے اوربلوچستان کی حفاظت کرناآپ کی ذمہ داری ہے   

                                                                        SOURCE: Facebook



We ask the HH honorable Khan Kalat to return back to Balochistan to help the provincial government to restore peace and help in implementing the development projects in Balochistan aimed to benefits the Baloch people at large  -- BCNA.

No comments:

Post a Comment