Sunday, June 9, 2013

حکمرانوں نے بلوچستان میں آپریشن کا عمل تیز کردیا ہے، بی این ایم

کوئٹہ ( پ ر) بلوچ نیشنل موؤمنٹ کے مرکزی ترجمان نے کہا کہ ریاستی    نئے کرداروں نے اسمبلی کی کرسیوں پر براجمان ہونے سے پہلے اور ساتھ جس طرح مکران کے مختلف علاقوں میں اپنی بربریت کا تماشا دکھایا اور پھر اسی سلسلے کو مزید شدت کے ساتھ نصیر آباد اور منگوچر،قلات ،اسپلنجی کے گرد نواع جوہان قابو میں جاری رکھا اور تاحال گرد نواع کے علاقوں میں بلوچ آبادی فوج و خفیہ اداروں کے ہاتھوں محصور ہیں اور جبر و تشدد کی تمام حدیں پار کر دی گئی ہیں جہاں درجن سے زائد افراد کو اغوا اور مزید فرزندوں ،خواتین و بچوں کی زندگیاں کھلی آسمان تلے فوجی بربریت کا شکار ہیں ۔ ترجمان نے کہا کہ اتوار کے روز بھی لاشوں کی برآمدگی کا سلسلہ جاری رہا گمان ہے کہ آپریشن کے دوران لاپتہ کیے جانے والے فرزندوں کی لاشیں ہو سکتی ہیں جو حکومت کی اقتدار کی حلف کے ساتھ عوام کو تحفہ ہو سکتے ہیں تر جمان نے مزید کہا کہ کل نیشنل پارٹی و خفیہ اداروں کا بلوچ لاپتہ افراد کے لواحقین ماؤں کی اجتجاج پر ڈول و جشن ان نام نہاد مڈل کلاس و اسکے اتحادیوں کے لیے باعث شرم ہے۔ جو ایک جانب مگر مچھ کے آنسو بھاتے ہیں تو دوسری طرف اپنی آقاؤں کی خوشنودی کے لیے بلوچ فرزندوں کی مسخ لاشوں و ماؤں کے آرمانوں پر ڈول باجے کی تال پر رقص کر کے لہولہان بلوچ سرزمین کا مزاق اُڑا رہے ہیں۔ایسے افراد اپنی سرزمین و قوم سے غداری کرنے والے افراد کی تاریخ سے نابلد ہیں یا ضرور کسی خوش فہمی کا شکار ہیں۔نیشنل پارٹی کے سربراہ ریاستی کرسی کی شیرنی و مٹاس میں یہ مت بھولیں کہ بلوچ قوم کا حافظہ کمزور ہرگز نہیں ہے۔ اور قوم اپنی آزادی کی جدوجہد میں بھر سرئے پیکار ہے جہاں بڑے بڑے سرکاری نواب ، سردار و آئے روز فوجی بمباریاں و مسخ لاشیں بلوچ سرزمین پر ریاستی قبضہ کو مستحکم نہ کر سکی ہیں تو یہ چند ریاستی نام نہاد مڈل کلاس کے دعوئے دار مہرئے بھی بلوچ قوم کو غلامی کی زنجیروں میں نہیں باندھ سکتے ہیں۔ترجمان نے مزید کہا کہ قوم کے سامنے جس طرح ان نام نہاد مڈل کلاس کے دعوئے داروں و دیگر کا چہرئے پہلے سے عیاں تھا آئے روز انکی حرکتوں سے انکی بلوچ وطن دشمنیاں،فرزندوں کے اغوا و شہادتوں میں انکا ملوث اور انہی کے اشا روں پر آئے روز بلوچ آبادیوں پر بمباری و فرزندوں کا اغوا واضح طور پر قوم کے سامنے ہے۔ریاست نے بلوچ جہد آزادی کو کاؤنٹر کرنے کے لیے اس بارنیشنل پارٹی و اسکے اتحادیوں کی صورت میں نئے چہروں کو پرانی مارو پھینکو کی پالیسوں میں تیزی کے ساتھ سامنے لایا ہے۔ ترجمان نے کہا کہ بلوچ نیشنل موؤمنٹ ریاستی ان چالوں کا اچھی طریقے سے ادراک رکھتی ہے ۔ بی این ایم کے کارکن اور قوم اپنی سرزمین پر ریاستی قبضہ کو دوام دینے والی ان قوتوں کو اپنی انقلابی جدوجہد سے خاک میں ملا دیں گے ۔







No comments:

Post a Comment