Sunday, June 9, 2013

پورے بلوچستان کو فورسز کے حوالے کردیا گیا ہے، بی این پی

کوئٹہ )پ ر(بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی بیان میں نوشکی میں گزشتہ کئی روز سے بے گناہ پارٹی ورکروں اور بلوچ عوام کی غیر قانونی طریقے سے گرفتاریاں ،حراساں کرنا اور چادر و چار دیواری کے تقدس کی پامالی ، بلا وجہ بلوچوں کے ذہنی کوفت سے دوچار کرنے کا عمل ، بلوچستان کے مختلف علاقوں میں آپریشن اور مسخ شدہ نعشوں کی برآمدگی کی شدید الفاظ مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ نوشکی میں بی این پی کے ورکروں اور بلوچ فرزندوں کے گھر پر رات کی تاریکی میں چھاپوں اور غیر قانونی اقدامات کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کیا جائے گا ایسا محسوس ہو رہا ہے کہ پورے بلوچستان کو فورسز کے حوالے کر دیا گیا ہے دشت ، اسپلنجی ، مارو سمیت بلوچستان کے دیگر علاقوں میں مسلسل آپریشن ، خوف و ہراس پھیلانا اور ماورائے عدالت قتل و غارت گری تواتر کے ساتھ اب بھی جاری ہے بیان میں کہا گیا ہے کہ بی این پی نوشکی سمیت دیگر علاقوں میں انسانی حقوق کی پامالی کو ہرگز برداشت نہیں کرے گی فوری طور پر نوشکی سے گرفتار بے گناہ نوجوانوں کو رہا کیا جائے بلوچستان کے جن علاقوں میں آج بھی مظالم ڈھائے جا رہے ہیں وہ آپریشن کے ذریعے بلوچ نسل کشی اور بے دردی کے ساتھ نعشوں کا برآمدگی وہی مظالم کا تسلسل ہے پانچویں آپریشن میں شدت لائی جا رہی ہے بی این پی بلوچستان میں کہیں بھی ظالم و زیادتی برداشت نہیں کرے گی مظالم پر جس طرح پارٹی ماضی میں خاموش نہیں رہی اب بھی جدوجہد جاری رکھے گی دریں اثناء پارٹی کے مرکزی بیان میں کہا گیا ہے کہ 30جون کوئٹہ میں ہونے والے تاریخی جلسہ عام میں بلوچ عوام اپنی شرکت کو یقینی بنائیں اور اسٹیبلشمنٹ اور حکمرانوں پر واضح کر دیں کہ جس طرح انہوں نے 11مئی کو بی این پی کو مینڈیٹ دیا اور جس طریقے سے کامیاب امیدواروں کے مینڈیٹ کو کوئٹہ و دیگر علاقوں میں چرایا گیا ان ناانصافیوں کے خلاف بلوچ عوام 30جون کو یہ ثابت کر دیں گے کہ بلوچ عوام بی این پی کے ساتھ ہیں اور یہ تاریخی جلسہ عام ایک ایسے وقت میں منعقد ہو رہا ہے جب بلوچستان میں انسانی حقوق کی پامالی میں شدت لائی جا چکی ہے پارٹی ورکر عوام رابطہ مہم تیز کرتے ہوئے عوام سے رابطہ کریں تاریخی فیصلے کا اعلان بھی اسی جلسے میں کیا جائیگا تمام بلوچ عوام بالخصوص کوئٹہ کے غیور بلوچوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ اس تاریخی جلسہ میں ثابت قدم ہو کر شرکت کریں یہ جلسہ عام بلوچ سیاست میں اہم سنگ میل ثابت ہوگی ۔








No comments:

Post a Comment