Wednesday, June 12, 2013

مشرف کی ججز کیس میں ضمانت منظور بگٹی قتل کیس میں مسترد بینظیر کیس میں چالان پیش کرنے کا حکم



ہائیکورٹ کا سابق صدر کو5 لاکھ روپے کے مچلکے کے عوض رہا کرنیکا حکم، کوئی جرم کیا ہے تو ثابت کیا جائے،وکیل پرویزمشرف


اسلام آباد، کوئٹہ، راولپنڈی (نمائندہ دنیا،خبر ایجنسیاں) اسلام آباد ہائیکورٹ نے ججز نظربندی کیس میں سابق صدر پرویز مشرف کی درخواست ضمانت منظور کرلی اور انہیں5 لاکھ روپے کے مچلکے کے عوض رہا کرنے کا حکم دیدیا جبکہ انسداد دہشت گردی کوئٹہ کی عدالت نے نواب اکبر بگٹی قتل کیس میں سابق صدر کی درخواست ضمانت مسترد کر دی، انسداد دہشت گردی راولپنڈی کی عدالت نے بھی بینظیر بھٹو قتل کیس میں ایف آئی اے کو پرویز مشرف کے خلاف چالان پیش کرنے کا حکم دیدیا ہے۔منگل کو اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس ریاض ا حمد خان اور جسٹس نور الحق این قریشی پر مشتمل ڈویژن بینچ نے ججز نظربندی کیس میں پرویز مشرف کی درخواست ضمانت کی سماعت کی،پرویز مشرف کے وکیل الیاس صدیقی ایڈووکیٹ نے کہا کہ سابق حکومت نے پرویز مشرف کو گارڈ آف آنر پیش کر کے رخصت کیا، جب وہ ملک سے باہر گئے تو ان کے خلاف کوئی مقدمہ تھانہ وہ اشتہاری تھے، اسپیشل پبلک پراسیکیوٹر عامر ندیم تابش نے کہا کہ کیا پرویز مشرف ایمرجنسی کے نفاذ اور ججز کی نظربندی کے وقت ملک کے سربراہ نہیں تھے، بتایا جائے کہ کون سی طاقت تھی جس نے چیف جسٹس اور دیگر ججز کو معزول کر کے گھروں میں نظربند کیا،دوران تفتیش ملزم نے اپنی بے گناہی کا کوئی ثبوت پیش نہیں کیا، اس موقع پر الیاس صدیقی ایڈووکیٹ نے کہا کہ ہم بے گناہی کیوں ثابت کریں، اگر پرویز مشرف نے کوئی جرم کیا ہے تو ثابت کیا جائے، پرویز مشرف نے پی سی او جاری کیا اور ججز کو نیا حلف لینے کا کہا گیا جس پر چار ججوں نے حلف بھی اٹھایا، پرویز مشرف نے ایمرجنسی کے نفاذ کے بعد ججوں کی نظربندی کا کوئی حکم جاری نہیں کیا بلکہ اس دوران چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری مختلف بار ایسوسی ایشنز سے خطاب بھی کرتے رہے، دلائل مکمل ہونے کے بعد فاضل عدالت نے مذکورہ فیصلہ محفوظ کر لیا اور کچھ ہی لمحوں بعد مختصر حکم جاری کر دیا۔ ادھر کوئٹہ میں انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت کے جج محمد اسماعیل نے نواب اکبر بگٹی قتل کیس میں نامزد ملزم جنرل (ر)پرویز مشرف کی درخواست ضمانت مسترد کردی جبکہ تفصیلی فیصلہ بعد میں جاری کیا جائے گا، کیس میں مخالف فریق نوابزادہ جمیل اکبر بگٹی کے وکیل سہیل راجپوت نے میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے کہا کہ عدالت کا فیصلہ خوش آئند ہے، ہمیں قوی امید ہے کہ اکبر بگٹی کے قتل میں ملوث پرویز مشرف اور دیگر نامزد ملزموں کو ضرور سزا ملے گی، دریں اثنا انسداد دہشتگردی راولپنڈی کی عدالت نمبر ایک کے جج حبیب الرحمن نے بینظیر قتل کیس کی سماعت کی،عدالت نے سرکاری پراسیکیوٹر کو سیکیورٹی نہ دینے پر راولپنڈی کے سی پی او کو 
ذاتی طور پر پیش ہو کر جواب دینے کا حکم دیا۔

http://dunya.com.pk/index.php/pakistan/2013-06-12/149931#.UbkXIo4kMqs

No comments:

Post a Comment